لاہور میں سکول کی طالبہ کے ساتھ پرنسپل کے بیٹے کی سکول میں ہی جنسی زیادہتی اور پھر اس کے ساتھ کیا کیا جان کر والدین کانپ اٹھیں گے

سکول پرنسپل کے اوباش بیٹے نے 5سالہ بچی کو مبینہ طور پر زیادتی کا نشانہ بنانے کے بعد بیہوشی کی حالت میں خالی پلاٹ میں پھینک دیا ، پولیس نے مقدمہ درج کر کے ملزم کو گرفتار کر لیا جبکہ بچی کو تشویشناک حالت میں لاہور کے میو ہسپتال ریفر کر دیا گیا۔بتایا گیا ہے۔جاری ہے ۔

loading...

کہ فیروزوالہ کے علاقے حیدر روڈ کے رہائشی غلام عباس کی 5سالہ بیٹی نرسری کلاس کی طالبہ کے ساتھ سکول پرنسپل کے اوباش بیٹے یاسر نے مبینہ زیادتی کی اور ہوس بجھانے کے بعد بیہوشی کی حالت میں خالی پلاٹ میں پھینک دیا۔ ۔جاری ہے ۔

پولیس تھانہ فیروزوالہ نے مقدمہ درج کرکے سکول پرنسپل کے بیٹے ملزم یاسر کو گرفتار کرلیا۔بچی کے والد کا کہنا ہے کہ میری پانچ سالہ بیٹی محلہ محمد نگر میں واقع پرائیویٹ سکول رانا ٹاﺅن میں نرسری کلاس میں پڑھتی ہے ، چھٹی کے بعد گھر نہ آئی تو اپنے بھائی کے ہمراہ بیٹی کو تلاش کرنے کے لئے گیا تو دیکھا میری بیٹی سکول کے ساتھ پلاٹ میں گھاس پر نیم مردہ حالت میں پڑی تھی۔ ۔جاری ہے ۔

بچی کے والد نے بتایا کہ کمسن بچی کو علاج معالجہ کے لئے شاہدہ ہسپتال لیکر گیا جنہوں نے لیڈی ایچ ہسپتال ریفر کیا جہاں پر موجود سٹاف نے میو ہسپتال لاہور ایمرجنسی ریفر کیا اور اب اس کا علاج جاری ہے۔

 مزید بہترین آرٹیکل پڑھنے کے لئے نیچے سکرول کریں ۔↓↓↓۔

کیٹاگری میں : news

اپنا تبصرہ بھیجیں